37

’پاکستان ریلوے کے 20 فیصد مسافر کم ہو گئے‘

وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ حکومت ریلوے کو سبسڈی دینے کے بجائے ریلوے ملازمین کی پینشن ادا کرے۔

شیخ رشید احمد نے کہا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے 34 ٹرینیں معطل کر دی ہیں جس سے ریلوے کے 20 فیصد مسافر کم ہو گئے ہیں۔

شیخ رشید نے کہا کہ 15 رمضان تک ٹرینیں معطل کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے، حالات بہتر ہونے پر معطل ٹرینیں بحال کی جائیں گی کیونکہ دو لاکھ مسافروں کو ان حالات میں ہینڈل کرنا مشکل ہے۔

ملک کو لاک ڈاؤن کرنے سے متعلق سوال پر وفاقی وزیر نے کہا کہ لاک ڈاؤن کا اختیار میرا نہیں وزیراعظم عمران خان کا ہے۔

اس دوران ایک صحافی نے سوال کیا کہ دفعہ 144 نافذ ہے مگر وزراء بڑی تعداد میں صحافیوں کو بلا کر پریس کانفرس کر رہے ہیں؟ جس پر شیخ رشید نے کہا کہ میں ہفتے میں ریلوے پر ایک پریس کانفرس کرتا ہوں،کہیں تو وہ بھی بند کردوں۔

انہوں نے کہا کہ ساری دنیا میں ہاتھ دھونے،منہ پر نہ لگانے اور آئسولیشن میں جانے کا پیغام چل رہا ہے مگر میری رہائش گاہ لال حویلی کے باہر روزانہ ہزاروں لوگ گزر رہے ہیں۔

شیخ رشید نے کہا کہ کل ایک دو پارکس میں گیا، لوگ کرکٹ کھیل رہے تھے، اس وقت لوگوں اور وزراء کو احتیاط کرنی چاہیے۔

ریلوے ملازمین کو نکالنے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ کسی ملازم کو نہیں نکالا جا رہا، حکومت ریلوے کو سبسڈی دینےکے بجائے ریلوے ملازمین کی پینشن ادا کرے۔

ملک میں کورونا کیسز کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور مزید نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مجموعی تعداد 519 ہوگئی ہے۔

مہلک وائرس سے بچاؤ کیلئے حکومت کی جانب سے اعلی سطح کے حفاظتی اقدامات جاری ہیں جس کے تحت ملک کے اسکول، دفاتر سب بند ہیں جب کہ کھیلوں کی سرگرمیاں، ایونٹس بھی منسوخ کر دیئے گئے ہیں ساتھ ہی سفری پابندی بھی عائد کی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں